سی پیک تعلیمی شعبے کو بھی مضبوط کرنے کا موقع فراہم کرتا ہے۔

سی پیک تعلیمی شعبے کو بھی مضبوط کرنے کا موقع فراہم کرتا ہے۔
  • July 4, 2024
  • 84

پاکستان چائنا جوائنٹ چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری (PCJCCI) کے صدر معظم گھرکی نے روشنی ڈالی کہ CPEC نہ صرف دونوں ممالک کے درمیان معیشت اور باہمی تجارت کو فائدہ پہنچاتا ہے بلکہ یہ پاکستان کو تعلیمی شعبے کو مضبوط بنانے کے لیے مزید پالیسیاں اپنانے اور ان تک رسائی کا موقع بھی فراہم کرتا ہے۔

پی سی جے سی سی آئی کے صدر نے کہا کہ پوری دنیا میں ترقی پذیر معیشتیں تعلیم کے شعبے کی بہتر ترقی اور عقلی معاشی ترقی اور خاطر خواہ ترقی کے لیے جدوجہد کر رہی ہیں۔ غربت کی لپیٹ میں پاکستان اور وزارت تعلیم (MOE) ملک میں تعلیمی چیلنجوں سے نمٹنے کے لیے نئی پالیسیاں بنا رہے ہیں۔

پی سی جے سی سی آئی کے سینئر نائب صدر فانگ یولونگ نے کہا کہ چین کی جدید ترین تحقیق اور ترقی اور ایجاد میں شاندار توسیع اور پیشرفت قابل ذکر اور شاندار ہے۔

2008 میں عالمی سطح پر، چین نے R&D کے اخراجات میں جاپان کو پیچھے چھوڑ دیا۔ اور چین کی سائنسی تحقیق کی پیداواری صلاحیت بھی بڑھ رہی ہے۔ اس طرح، 'ایشین ڈریگن' کے طور پر چین کا عالمی عروج چین کے تعلیمی نظام کے تعلیمی اور تکنیکی معیارات کا کارنامہ ہے جو قومی اور بین الاقوامی مارکیٹ کی طلب کے مطابق مسابقتی افرادی قوت پیدا کر رہا ہے۔

لہذا CPEC پاکستان کو دنیا کی سب سے بڑی معیشت کے ساتھ جسمانی طور پر جڑنے کا موقع فراہم کرتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ CPEC منصوبہ پاکستان کے لیے گیم چینجر ہے کیونکہ اس سے ملک کی خامیوں پر توجہ مرکوز کرنے کی توقع ہے اور پاکستان کو چین سے تعلیمی حکمت عملی اور تعلیمی پالیسی پر عمل درآمد کے منصوبوں کو سیکھنے اور ان کو اپنانے کا موقع ملتا ہے، جو کہ ایک ضروری منصوبہ ہے۔

حمزہ خالد، نائب صدر PCJCCI نے کہا کہ CPEC کے ذریعے پاکستان کو تعلیم کے شعبے میں چین کے تجربات سے استفادہ کرنے کا موقع ملا ہے اور وہ مختلف جدید ٹیکنالوجیز کو اپنا سکتا ہے جسے چین اس وقت تعلیم کے شعبے خصوصاً انجینئرنگ، ٹیکنالوجی کے شعبے میں استعمال کر رہا ہے، اور پیشہ ورانہ اور تکنیکی تربیت کی مہارت کے تعلیمی پروگرام جو ملک کے بے روزگاری کے چیلنج کا بھی تعین کریں گے۔

پی سی جے سی سی آئی کے سیکرٹری جنرل صلاح الدین حنیف نے کہا کہ مارکیٹ کی مانگ کے مطابق نوجوانوں کے لیے نئے پروگرام شروع کیے جائیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ ہمارا چیمبر پاکستان اور چین کے درمیان علمی روابط پر دستخط کرنے اور اسے فروغ دینے کے لیے ایک پلیٹ فارم فراہم کرتا ہے۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ سی پیک صوبے میں روزگار کے بے پناہ مواقع پیدا کرے گا۔

You May Also Like